پاکستان

خفیہ ایجنسیوں نے لاہور دھماکے کے الزام میں خاتون کو گرفتار کرلیا

Johar-Town-blast

لاہور – انٹیلی جنس ایجنسیوں نے جوہر ٹاؤن دھماکے کے مرکزی ملزم سے رابطے میں رہنے والی ایک خاتون کو گرفتار کرلیا۔

ذرائع کے مطابق پیٹر پال ڈیوڈ لاہور میں قیام کے دوران ایک خاتون سے رابطے میں رہتا تھا۔

مرکزی ملزم پیٹر پال کے ذریعہ دی گئی اطلاع پر مشتبہ کرن کو گرفتار کیا گیا تھا۔ اس خاتون سے پیٹر پال کے بارے میں پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔

اس سے قبل خفیہ ایجنسیوں نے دھماکے کے لئے گاڑی کی تیاری میں مدد کرنے کے شبے میں ایک کار میکینک کو گرفتار کیا تھا۔

ذرائع کے مطابق ، ایجنسیوں نے گرفتار میکینک کو مزید تفتیش کے لئے نامعلوم مقام پر منتقل کیا تھا۔ تاہم ، تفتیشی ایجنسیاں واقعے کی جگہ پر گاڑی کھڑی کرنے والے شخص کا پتہ لگانے اور اسے گرفتار کرنے میں ناکام ہیں۔

دوسری جانب سیکیورٹی اہلکاروں نے گرفتار غیر ملکی قومی ملزم پیٹر پال ڈیوڈ کے گھر کا سراغ لگا لیا۔ ذرائع نے بتایا کہ مبینہ طور پر ملزم کا تعلق محمود آباد سے تھا اور اس کی رہائش گاہ سے اہم دستاویزات بھی ضبط کرلی گئیں۔

انٹیلی جنس ایجنسیوں نے لاہور کے جوہر ٹاؤن میں دھماکے کی رپورٹ تیار کرلی ہے۔

رپورٹ کے مطابق جائے وقوعہ سے ریموٹ کنٹرول ڈیوائس کا استعمال کرکے دھماکے کرنے کے شواہد ملے ہیں۔ تاہم ، دھماکہ خیز مواد کی نوعیت کے بارے میں ابھی تک کچھ پتہ نہیں چل سکا ہے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ کسی بھی دہشت گرد تنظیم نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

Dont Miss Next