تجارت

غیر ملکی سرمایہ کاروں کی 2020 کے دوران 2.4 بلین ڈالر کی سرمایہ کاری

OICCI

کراچی – اوورسیز انویسٹرز چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (او آئی سی سی آئی) ، جو 35 ممالک سے تعلق رکھنے والے پاکستان میں 200 سے زیادہ غیر ملکی سرمایہ کاروں کی رہنمائی کے چیمبر ہے ، نے سال 2020 کے لئے اپنے ممبروں کی مستحکم مالی شراکت جاری کردی ہے۔

صدر او آئی سی سی آئی عرفان صدیقی نے روشنی ڈالی کہ “ہمیں فخر ہے کہ پچھلے بارہ مہینوں میں ، او آئی سی سی آئی کے ممبران ، عالمی سطح پر اور پاکستان میں لوگوں کے کاروبار اور زندگی پر کوويڈ-19 کے اثرات کے باعث انتہائی چیلینج اور غیر یقینی کاروبار کے ماحول میں ، ایک روپیہ سے زیادہ کا حصہ ادا کیا۔ پاکستان کے ٹیکس محصولات کی مد میں ، ہر کام کے دن 4 کھرب ، یا تقریبا5 5 ارب روپے ، ملک میں کل ٹیکس وصولی کا ایک تہائی۔ او آئی سی سی آئی کے دو ممبروں نے ہر ایک پر 100 ارب روپے سے زیادہ ٹیکس ادا کیا “۔

عرفان صدیقی نے مزید کہا کہ “او آئی سی سی آئی کے ممبران پاکستان پر یقین رکھتے ہیں اور آگے بڑھنے کی پیش گوئی کرنے والی ، شفاف اور مستحکم پالیسی فریم ورک اور کاروباری دوست ریگولیٹری اور آپریٹنگ ماحول کی حمایت کرتی ہوئی ترقی کرتی معیشت میں زیادہ نمایاں کردار ادا کرنے کے خواہاں ہیں”۔

او آئی سی سی آئی کے ممبران نے گذشتہ نو سالوں میں توانائی ، ٹیلی کام ، کیمیکلز ، فوڈ / ایف ایم سی جی اور بینکنگ کے شعبوں میں 18 بلین امریکی ڈالر سے زیادہ کی سرمایہ کاری کی ہے۔ سیکرٹری جنرل ، او آئی سی سی آئی ، ایم عبد العلیم نے مزید کہا کہ ، “137 بلین امریکی ڈالر کے اثاثہ کی بنیاد کے ساتھ ، او آئی سی سی آئی کے ممبروں نے 2020 کے دوران پاکستان میں سب سے اہم سرمایہ کاروں کی حیثیت سے اپنی پوزیشن برقرار رکھی ، جس میں بنیادی طور پر توانائی میں 2.4 بلین امریکی ڈالر کی نئی سرمایہ کاری ہے۔ ، ٹیلی کام اور کیمیکل سیکٹر۔

آخر میں ، او آئی سی سی آئی کے سکریٹری جنرل نے مشاہدہ کیا کہ “پاکستان منفی تاثرات کا شکار ہے جس کے لئے بڑی حد تک انکار نہیں کیا جاتا ہے ، حکام کو او آئی سی سی آئی جیسے سنجیدہ اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ شراکت میں کام کرنے کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ ملک کو اس خطے میں آنے والی اہم ایف ڈی آئی کا اپنا حصہ مل جائے گا۔” .

Dont Miss Next